مسلح افواج کا سکیورٹی کے علاوہ انتخابی عمل سے کوئی تعلق نہیں تھا مسلح افواج نے انتخابات میں عوام کو محفوظ ماحول فراہم کیا، کچھ سیاسی عناصر مسلح افواج کو بدنام کررہے ہیں جو انتہائی قابل مذمت ہے۔ آرمی چیف جنرل عاصم منیر کی زیرصدارت کورکمانڈرز کانفرنس

راولپنڈی ( ۔ 05 مارچ 2024ء) آرمی چیف جنرل عاصم منیر کی زیرصدارت کورکمانڈرز کانفرنس نے کہا ہے کہ مسلح افواج نے مینڈیٹ کے مطابق انتخابات میں عوام کو محفوظ ماحول فراہم کیا، مسلح افواج کا سکیورٹی کے علاوہ انتخابی عمل سے کوئی تعلق نہیں تھا۔ پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ آئی ایس پی آر کے مطابق چیف آف آرمی سٹاف جنرل عاصم منیر کی زیر صدارت 263ویں کورکمانڈرز کانفرنس کا انعقاد ہوا، کانفرنس میں ملک کو درپیش اندرونی و بیرونی چیلنجز کا جائزہ لیا گیا۔

شرکاء نے مسلح افواج کی کاوشوں اور شہداء کی عظیم قربانیوں کو خراج تحسین پیش کیا۔فیلڈ کمانڈرز آپریشنز میں پیشہ ورانہ مہارت اور آپریشنل تیاریوں کے اعلیٰ معیار کو برقرار رکھیں۔ فیلڈ کمانڈرز فارمیشنز کی تربیت کے دوران بہترین کارکردگی کا مظاہرہ کریں۔

ملک کی سماجی معاشی ترقی اور سکیورٹی معاملات میں حکومت کی بھرپور حمایت کی جائے گی، پاکستان کے عوام ملک کی ترقی میں دل وجان سے حصہ لیں۔

شرکاء کانفرنس نے کہا کہ مسلح افواج نے مینڈیٹ کے مطابق انتخابات کیلئے عوام کو محفوظ ماحول فراہم کیا، مسلح افواج کا سکیورٹی کے علاوہ انتخابی عمل کے ساتھ کوئی تعلق نہیں تھا، الیکشن کے بعد کا ماحول پاکستان میں معاشی اور سیاسی استحکام لائے گا، جمہوری استحکام ہی ملک کیلئے آگے بڑھنے کا راستہ ہے،مشکلات کے باوجود فوج نے الیکشن کمیشن کی ہدایات کی روشنی میں انتخابات کیلئے محفوظ ماحول فراہم کیا، فورم نے عام ا نتخابات میں عوام کو محفوظ ماحول فراہم کرنے پر سکیورٹی اداروں ، سول انتظامیہ کی کوششوں کو سراہا۔

 

پاکستان کو غیرمستحکم کرنے والے عناصر کے خلاف طاقت سے نمٹنے کے عزم کا اعادہ کیا گیا۔ کورکمانڈرز کانفرنس نے فیک نیوز اور مس انفارمیشن پر اظہار تشویش کیا۔ چند عناصر غلط خبریں پھیلا کر عوام میں مایوسی پھیلانا چاہتے ہیں، ایسے عناصر سوسائٹی میں تقسیم پید اکرنا چاہتے ہیں، پاکستان کے غیور عوام متحد رہیں اور مثبت رویہ اپنائیں، میڈیا بالخصوص سوشل میڈیا کے کچھ مفاد پرست عناصر نے مسلح افواج کو بغیر کسی ثبوت بدنام کیا، فورم نے مایوسی پھیلانے اور تفرقہ ڈالنے کیلئے پھیلائی جانے والی غلط اور جعلی خبروں پر تشویش کا اظہار کیا۔

 

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *