Wed. Apr 24th, 2024

دھاندلی کیخلاف وہ تحریک چلائیں گے جو اس حکومت کی کایا پلٹ دے گی، مولانا فضل الرحمان

سندھ اسمبلی اور بلوچستان اسمبلی خریدی گئی ہے، 2024ء کے انتخابات کی دھاندلی نے 2018ء کی دھاندلی کا ریکارڈ توڑ دیا، پارلیمنٹ اپنی حمایت کھورہی ہے۔ کراچی میں میڈیا سے گفتگو

کراچی ( 03 مارچ 2024ء ) جمعیت علمائے اسلام ف مولانا فضل الرحمان نے کہا ہے کہ یہ پارلیمنٹ دھاندلی کی پیداوار ہے، دھاندلی کے خلاف وہ تحریک چلائیں گے جو اس حکومت کی کایا پلٹ دے گی۔ کراچی میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ اس سال 8 فروری کو الیکشن ہوئے تھے اس کے نتائج کو مسترد کردیا تھا جو شواہد سامنے آرہے ہیں ہمارے مؤقف کی تصدیق کررہے ہیں، سندھ اسمبلی اور بلوچستان اسمبلی خریدی گئی ہے، 2024ء کے انتخابات کی دھاندلی نے 2018ء کی دھاندلی کا ریکارڈ توڑ دیا، پارلیمنٹ اپنی حمایت کھورہی ہے، ہم نے تحفظات میں پارلیمنٹ میں جانے کا فیصلہ کیا، ہمارا کسی کے ساتھ کوئی مسئلہ نہیں، مسئلہ صرف عوام کا ہے، قوم ان کو تسلیم نہیں کرے گی، ہم نے جمہوریت کے ساتھ کھڑا ہونے کافیصلہ کیا، ہمارے حق پر ڈاکہ ڈالا گیا اس کو تسلیم نہیں کرتے۔

سربراہ جے یو آئی ف کا کہنا ہے کہ جبر کو جبر کہا جائے گا چاہے کوئی بھی ہو، ہم نے سیاست میں کبھی تلخی کو فروغ نہیں دیا ہم اپنے مؤقف پر قائم ہیں، ہم نے اپنے مؤقف کو منوالیا ہے، پارلیمنٹ میں جائیں گے کوئی ووٹ ہم استعمال نہیں کریں گے، 2018ء میں ہمارا خیال تھا کہ سب سے بڑی دھاندلی ہوئی ہے لیکن 2024ء میں اس کا ریکارڈ توڑ دیا ہے، ہم قومی اسمبلی میں اپوزیشن بینچز پر بیٹھیں گے۔
ان کا کہنا تھا کہ یہ ایک حقیقت ہے کہ جمہوریت نے اپنا مقدمہ ہار دیا ہے، پارلیمنٹ اپنی اہمیت کھو رہی ہے، یہ پارلیمنٹ عوام کی نمائندہ نہیں یہ قوم کے دلوں پر حکومت نہیں کرسکیں گے، ہماری کسی سے ذاتی دشمنی نہیں، اقتدار کی کرسی کو جاگیر سمجھ لیا ہے، ہم ان حالات کو تسلیم نہیں کریں گے، تحریک چلائیں گے جس کے لیے چاروں صوبوں کے مجالس شوریٰ کو اعتماد میں لے رہے ہیں۔

By admin

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *